غزل - ۴۰

آپ آتے تھے، مگر کوئی عناں گیر بھی تھا

اس میں کچھ شائبہٴ خوبیِ تقدیر بھی تھا

کبھی فتراک میں تیرے کوئی نخچیر بھی تھا

ہاں کچھ اک رنجِ گرانباریِ زنجیر بھی تھا

بات کرتے کہ میں لب تشنہٴ تقریر بھی تھا

 گر بگڑ بیٹھے تو میں لائقِ تعزیر بھی تھا

نالہ کرتا تھا، ولے طالبِ تاثیر بھی تھا

ہم ہی آشفتہ سروں میں وہ جوانمیر بھی تھا

 آخر اُس شوخ کے ترکش میں کوئی تیر  بھی تھا

 آدمی کوئی ہمارا َدمِ تحریر بھی تھا؟

 ہوئی تاخیر تو کچھ باعثِ تاخیر بھی تھا

 تم سے بے جا ہے مجھے اپنی تباہی کا گلہ

 تو مجھے بھول گیا ہو تو پتا بتلا دوں؟

 قید میں ہے ترے وحشی کو وہی زلف کی یاد

بجلی اک کوند گئی آنکھوں کے آگے تو کیا!

 یوسف اس کو کہوں اور کچھ نہ کہے، خیر ہوئی

 دیکھ کر غیر کو ہو کیوں نہ کلیجا ٹھنڈا

 پیشے میں عیب نہیں، رکھیے نہ فرہاد کو نام

 ہم تھے مرنے کو کھڑے، پاس نہ آیا، نہ سہی

 پکڑے جاتے ہیں فرشتوں کے لکھے پر ناحق

 ریختے کے تمہیں استاد نہیں ہو غالب

 کہتے ہیں اگلے زمانے میں کوئی میر بھی تھا

* * * * *

لب خشک در تشنگی مردگاں کا

زیارتکدہ ہوں دل آزردگاں کا

ہمہ نا امیدی، ہمہ بد گمانی

 میں دل ہوں فریبِ وفا خوردگاں کا

* * * * *

Comments

This red cottony lehenga is aswell accepting discount. Majority of the brides in dior replica India chafe Red atramentous Lehenga for one of the functions. Aswell some of them admission another on abounding fabrics like silk. So this is complete bridal Lehanga for our admirable abettor that too at best price. This Lehenga has hermes replica casting of red with shades of pink, orange and yellow. It's alluringly crafted in Jacquard, georgette and net fabic. This bridal Lehenga is for those girls who are not gucci replica absorbed of blossom red. Aswell this chef-d'oeuvre can be exhausted at any added activity by abettor or abutting ancestors members. Aswell usually bridal cloths are brash as waste, but this blossom louis vuitton replica is so abnegation that this lehenga can be calmly donned at any added occasions.